بال قبل ازوقت سفیدہونے کی وجوہات اور علاج

بال عموماً 35 سال کی عمر میں سفید ہونے لگتے ہیں لیکن اس کا آغاز نوجوانی میں بھی ممکن ہے ۔ آج کل اس مسئلہ میں اضافہ ہوتا جارہا ہے کیونکہ لوگ الجھن بھری زندگی گذار رہے ہیں۔ بالوں کی دیکھ بھال ناکافی ہے ۔ بال سفید ہونا دونوں صنفوں میں مشترک ہے ۔لیکن مرد سفید بالوں کے بارے میں زیادہ حساس ہوتے ہیں ۔ وہ انھیں چھپا نہیں سکتے جیسا کہ عورتیں عصری رنگ کی مصنوعات کے ذریعہ کرتی ہیں۔
بالوں کے سفید ہونے کی اہم علامت یہ ہیکہ باقاعدہ دبیز بالوں کی نشوونما کا موقعہ نہیں ملتا ۔ 35 سال کی عمر سے پہلے بالوں کاسفید ہوجانا قبل از وقت کہلاتا ہے ۔ چنانچہ زیادہ مہین سفید بالوں کو تیزی سے نشوونما پانے کا موقعہ ملتا ہے جو معمول سے زیادہ ہوتا ہے ۔ یہ انقلابی تبدیلی تیزی سے آتی ہے لیکن بے شک راتوں رات نہیں ہوتی۔
وجوہات :
آج کل نوجوان جس پریشانی کا شکار ہو رہے ہیں ، ان میں سے ایک وقت سے بالوں کا سفید ہو جانا بھی ہے۔ لڑکے ہوں یا لڑکیاں سب ہی اس مسئلے کا شکار ہوتے دکھائی دے رہے ہیں ، وقت سے قبل بال سفید ہو جانے کی وجوہات درج ذیل ہیں۔
تھائی رائیڈ کے مسائل:
اگر کسی کو تھائی رائیڈ کا مسئلہ رہتا ہے تو اس کے بال بھی وقت سے قبل سفید ہو جاتے ہیں۔ مختلف ریسرچز کے ذریعے یہ بات سامنے آئی ہے کہ تھائی رائیڈ کے مسائل کے شکار افراد کے بال تیزی سے سفید ہونے لگتے ہیں۔ لہٰذا فوراً ڈاکٹر سے رجوع کریں اور تھائی رائیڈ کا علاج کروائیں۔
وٹامن بی 12کی کمی:
ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر نوجوانوں میں وٹامن بی 12 کی کمی ہوجائے تو ان کے بال وقت سے قبل سفید ہونے لگتے ہیں۔ یہ وقت سے قبل بالوں کے سفید ہونے کی سب سے عام وجہ ہے۔ یاد رکھیں کہ وٹامن بی 12 کی کمی کی وجہ سے جہاں بال سفید ہوجاتے ہیں وہیں بالوں کا گرنے کا عمل بھی تیز ہو جاتا ہے ۔ اسلئے کوشش کریں کہ ایسی غذائیں استعمال کریں، جن میں وٹامن بی موجود ہو۔ انڈہ، گوشت، مچھلی کو اپنی خوراک کا حصہ بنائیں۔ ڈاکٹر کے پاس جاکر وٹامن بی 12 کی سپلی منٹس لکھوالیں اور ان کا استعمال کریں۔
ذہنی دباؤ:
جدید دور میں اسٹریس /ذہنی دباؤ کا ہر انسان شکار ہو رہا ہے ۔ نوجوان بھی اپنی پڑھائی، جاب اور اردگرد کے حالات کی وجہ سے شدید ذہنی دباؤ کا شکار ہو رہے ہیں ۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ زیادہ اسٹریس لینے کی وجہ سے بھی انسان کے بال قبل از وقت سفید ہو جاتے ہیں۔ اس لئے وہ نوجوان جن کے بال سفید ہو رہے ہیں، انہیں چاہئے کہ وہ زیادہ ٹینشن نہ لیں، ذہنی دباؤ کا شکار نہ ہوں، کوشش کریں کہ اپنے ذہن کو بٹائیں۔ اس طرح ذہنی دباؤ کو کم کرکے بالوں کو سفید ہونے سے محفوظ رکھا جا سکتا ہے ۔
جنک فوڈ کا زیادہ استعمال:
جب سے آن لائن کھانا گھروں میں ڈیلیور کی جانے والی سروس ہمارے یہاں مقبول ہوئی ہے، زیادہ تر لوگ باہر سے ہی کھانا آرڈر کرتے ہیں۔ ان دنوں جنک فوڈ کا استعمال بھی بڑھ گیا ہے۔ جان لیں کہ وقت سے قبل بال سفید ہونے کی ایک بڑی وجہ جنک/ فاسٹ فوڈ کا زیادہ استعمال بھی ہے ۔ اگر نوجوان متوازن گھریلو غذا کا استعمال کریں گے تو انہیں ان غذاؤں سے فیریٹن، کیلشیم، وٹامن ڈی تھری، وٹامن بی 12، کوپر، زنک اور آئرن کا حصول ممکن ہوسکے گا، لیکن کیونکہ آج کل گھریلو کھانے کم کھائے جا رہے ہیں تو یہ تمام غذائی اجزا جسم کو نہیں مل پاتے ۔ جنک فوڈ میں یہ غذائیت موجود نہیں ہوتی، لہٰذا ان کی کمی کی وجہ سے بال سفید ہونا شروع ہو جاتے ہیں۔
جینیاتی طور پر وراثت میں ملنا:
کچھ لوگوں کے ننھیال یا ددھیال کے لوگوں کے بال جلدی سفید ہو جاتے ہیں، یا ان کے والدین کے بال وقت سے پہلے سفید ہوئے ہوں گے تو اس وجہ سے بھی نوجوانوں کے بال وقت سے پہلے سفید ہوجاتے ہیں۔ انہیں جینیاتی طور پر وراثت میں یہ چیز ملتی ہے ، لہٰذا قبل از وقت بالوں کے سفیدہونے کی ایک اہم وجہ یہ بھی ہوتی ہے۔
کیمیکلز والی ہئیر پروڈکٹس کا استعمال:
آج کل بالوں کو خوبصورت دکھانے اور اسٹائلنگ کرنے کیلئے ہئیر پروڈکٹس کا استعمال کیا جاتا ہے ۔ نوجوان خوشی خوشی روزانہ ان پروڈکٹس کو بالوں پر لگاکر اپنے کالج، یونیورسٹی اور آفسز جاتے ہیں ۔ جان لیں کہ کیمیکلز والے شیمپو، ہئیر پروڈکٹس، جیل، اسپرے وغیرہ بھی بالوں کو تیزی سے سفید کرنے کی ایک بڑی وجہ ہیں ۔ یہ کیمیکلز بالوں کے ”میلانن“ لیول کا کم کردیتے ہیں، جس سے بالوں کا قدرتی رنگ ختم ہونا شروع ہو جاتا ہے اور وہ سفید ہونے لگتے ہیں۔
علاج :
بالوں کے قبل از وقت سفید ہونے کا انسداد اور اس پر قابو پانا بہت اہم ہے ۔ ضروری وٹامنس اور معدنیات کی سربراہی کے لئے زیادہ پھلوں اور ترکاریوں کا استعمال ضروری ہے ۔ تغذیہ اور مناسب پرورش بھی بالوں کی افزائش ، ان کی چمک اور سر کی جلد کو اچھی رکھنے کے لئے ضروری ہے ۔ روزانہ سر دھونے اپنے بالوں کی مناسبت سے شیمپو کنڈیشنر استعمال کریں ۔
حد سے زیادہ کنڈیشنر سے بال چپچپے ہوجاتے ہیں ۔ سر میں دوران خون بہتر ہونے کے لئے انگلیوں کی پوروں سے مالش کریں۔ تازہ خون کی روانی سے بالوں کی افزائش بہتر ہوتی ہے ۔ بالوں کو رنگنے کی مصنوعات سے جن میں امونیا زیادہ ہو بالوں کو نقصان پہنچتا ہے ۔
بارش کے بعد ہوا ميں پانی کے تیرتے ہوئے ننھے ننھے کروی (گیند نما Spherical) قطروں پر جب سورج کی سفید روشنی پڑتی ہے تو سات رنگوں میں بکھر جاتی ہے جسے دھنک یا۔۔۔ مزید پڑھیں

آج ہم وٹامن ای کے ان حیران کن فوائد اوراستعمالات کے بارے میں بتائیں گے، جن کے بارے میں آپ نے کبھی بھی نہیں سناہوگا۔وٹامن ای کومختلف اشیاے کے ساتھ۔۔۔ مزید پڑھیں

ملک و ملت کا نام روشن کرنے والوں کا نام روشن رکھنا زندہ قوموں کا شیوہ رہا ہے۔ ہم بحیثیتِ پاکستانی اپنے فرزندِ ملت ڈاکٹر عبدالسلام کی کاوشوں کو سراہتے ہیں۔۔۔ مزید پڑھیں

کچھ کھانے ایسے ہیں جنہیں دوسرے کھانوں میں شامل کر کے کھایا جائے تو وہ ہمارے نظام انہظام پر اچھے اثرات مرتب نہیں کرتے اور بعض دفعہ ہمیں بیمار بھی کر دیتے ہیں۔۔۔ مزید پڑھیں

دنیا میں چند عمارات ایسی بھی ہیں جن کی تعمیر پر ایک شاہانہ بجٹ خرچ کیا گیا ہے جس کے ساتھ ہی انہیں دنیا کی مہنگی ترین عمارات ہونے کا اعزاز حاصل ہوچکا ہے۔۔۔ مزید پڑھیں

ایک دن نائی نے بادشاہ سے عرض کیا،حضور آپ وزیر کی جگہ مجھے وزیر کیوں نہیں بنا دیتے۔ بادشاہ نے مسکرا کر حجام کی طرف دیکھا اور اس سے کہا،ٹھیک ہے لیکن پہلے تم۔۔۔ مزید پڑھیں

یہ تاریخ کا پہلا واقعہ تھا کہ کسی ہندو کی چتا کو آگ نہ لگنے کی وجہ سے شمشان گھاٹ میں ہی دفنا دیا گیا ۔ایک ہندو احترام قران میں اس دنیا کی آگ سے محفوظ رہا ہم اس کتاب پر۔۔۔ مزید پڑھیں

یہ ایک مفلس غریب الوطن کے عزم و ہمت کی انوکھی داستان ہے جو ثابت کرتی ہے کہ آپ ڈٹے رہیں، محنت کرتے رہیں تو بالآخر کامیابی آپ کے قدم چومتی ہے۔۔۔ مزید پڑھیں

برہنہ حالت میں کبھی خود کو آئینے میں مت دیکھیں کیونکہ اس طرح جن آپ پر عاشق ہو سکتے ہیں اور آپ کے ساتھ تعلق کی کوشش کر سکتے ہیں۔ ایسی صورت میں اور کوئی بھی ۔۔۔ مزید پڑھیں

جوزف سوان اور تھامس ایڈیسن نے 1870 کی دہائی میں بجلی کا بلب بنایا۔ اس سے چند برس بعد ایڈیسن نے بجلی بنانے کے سٹیشن نیویارک میں پرل سٹریٹ اور لندن میں ۔۔۔ مزید پڑھیں

انسان نے سونا 8,000 سال قبل دریافت کر لیا تھا۔ 750 سال قبل از مسیح تک یعنی سونے کی دریافت کے سوا پانچ ہزار سال بعد تک انسان صرف سات دھاتوں سے واقف تھا ۔۔۔ مزید پڑھیں

سورہ کہف کی تلاوت فتنے دجال سے نجات کا باعث ہے ۔ خروج دجال قیامت کی بڑی نشانیوں میں سے ایک ہے اور فتنہ دجال زمانے کے شروفتن میں سب سے بڑا فتنہ ہے مکہ مکرمہ۔۔۔ مزید پڑھیں