اخروٹ کا استعمال کن بیماریوں سےبچاتاہے؟

sample-ad

اخروٹ خشک میوا جات کا بادشاہ ہے جس کا خشک میووں میں اور کوئی ثانی نہیں ۔اخروٹ فائبر، وٹامنز، منرلز، مُفید آئل کے خزانوں کے علاوہ بھی اپنے اندر بہت کچھ رکھتا ہے۔
پچھلے 50 سالوں سے سائنس دان، غذائی ماہرین، ادویات بنانے والے اور دیگر فُوڈ ماہرین ہر سال امریکہ میں یونیورسٹی آف کیلیفورنیا میں اکھٹے ہوتے ہیں اور پُورے سال اخروٹ پر کی گئی نئی تحقیقوں پر بحث کرتے ہیں اور ہر سال ماہرین کی تحقیقات اخروٹ کے نئے سے نئے فائدے دریافت کرتی ہیں۔
اس آرٹیکل میں ہم اخروٹ کے سائنسی طور پر تحقیق شُدہ چندفائدے شامل کر رہے ہیں جنہیں پڑھ کر آپ بھی اخروٹ کو آپ اپنی روزمرہ کی خوراک کا حصہ بنانا چاہیں گے۔
اخروٹ اینٹی آکسائیڈینٹ:
اینٹی اکسائیڈینٹس ہمارے جسم کے تمام اعضا کو خراب ہونے سے بچاتے ہیں اور اخروٹ اینٹی آکسائیڈینٹس کا خزانہ ہے اور اس خُوبی میں اور کوئی خشک میوہ اخروٹ کوچھو کر بھی نہیں گزرتا۔
اخروٹ کی اینٹی آکسائیڈینٹ خُوبیاں اخروٹ میں شامل وٹامن ای، میلاٹونن اور پولی فینلز کی بدولت ہوتی ہیں اور ایک تحقیق کے مطابق وہ لوگ جو روزانہ اخروٹ کھاتے ہیں وہ کولیسٹرال کے بڑھنے اور کولیسٹرال سے پیدا ہونے والی بیماریوں سے محفوظ رہتے ہیں۔
اخروٹ اومیگا تھری کا خزانہ:
اومیگا تھری فیٹی ایسڈ ہماری صحت کے لیے انتہائی مُفید ہیں جو ہمیں جہاں صحت مند رہنے میں مددگار ہیں وہاں بہت سے بیماریوں جیسے دل کی بیماریاں، کولیسٹرال، اور کئی دیگر دائمی بیماریوں کو قابو کرنے میں اپنا کوئی ثانی نہیں رکھتے اور اخروٹ اومیگا تھری فیٹی ایسڈ کا خزانہ ہے اور جتنی اومیگا تھری اخروٹ میں ہوتی ہے وہ اور کسی دُوسرے خشک میوے میں نہیں ہوتی۔
ایک تحقیق کے مُطابق جو لوگ روزانہ ایک اخروٹ کھاتے ہیں اُن میں دوسرے افراد کی نسبت دل کی بیماریاں لاحق ہونے کے خدشات 10 فیصد کم ہوجاتے ہیں۔
اعضا کی سُوجن:
اعضا کی سُوجن یعنی اینفلامیشن بہت سی دائمی بیماریوں کی ماں ہے جن میں دل کی بیماریاں، ذیابطیس ٹایپ 2 کی بیماری، یاداشت ختم ہونے کی بیماری اور کینسر جیسی بیماریاں شامل ہیں اور ماہرین کا کہنا ہے کہ اخروٹ Inflammation ختم کرنے کے لیے ایک اکسیر کا درجہ رکھتا ہے۔
آنتوں کے لیے انتہائی مُفید:
ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر آپ کی آنتوں میں دوست بیکٹریا اور دوست مائکروب کثرت سے ہیں تو اسکا مطلب ہے کہ آپ کی صحت لمبی عُمر تک خراب نہیں ہوگی۔
ایک تحقیق میں 194 لوگوں کو روزانہ 43 گرام اخروٹ کھلا کر اُن کی آنتوں میں دوسٹ بیکٹریا اور مائکروبس کا مُشاہدہ کیا گیا تو نتائج میں دیکھا گیا کہ صرف 8 ہفتے میں اُن کی آنتوں میں بیکٹریا اور مائیکروب کا صحت مندانہ اضافہ ہوا اور اُن کے نظام انہظام اخروٹ کھانے سے مزید فعال ہوا۔
کینسر سے بچائو:
ماہرین کا کہنا ہے کہ اخروٹ کھانے سے بہت سے کینسر لاحق ہونے کا خدشہ کم ہوجاتا ہے جن میں خواتین کا بریسٹ کینسر پروسٹیٹ کینسر اور کولریکٹل کیسنر سر فہرست ہیں۔
موٹاپاختم:
اخروٹ میں شامل ڈائٹری فائبر جہاں ہمارے نظام انہظام کو درست کرکے فعال کرتی ہے وہاں یہ ہمارے معدے کو بھرا رکھتی ہے اور ہمیں بلاوجہ کی بھوک سے بچاتی ہے، بلاوجہ کی بھوک نظام انہظام کے فعال نہ ہونے کی وجہ سے بھی لگتی ہے کیونکہ جب جسم کو کھائی گئی خوراک سے پوری توانائی نہیں ملتی تو وہ مزید کھانا مانگتا ہے۔
ایک تحقیق کے مُطابق روزانہ 50 گرام اخروٹ کھانے والوں کی بھوک میں نمایاں کمی دیکھی گئی اور 5 دن کے بعد ان لوگوں کے برین سکین سے پتہ چلایا گیا کہ اخروٹ کھانے والوں کے دماغ میں میٹھے کھانے اور فاسٹ فوڈز کی کشش ختم ہو جاتی ہے۔
ذیابطیس ختم:
ماہرین کے مُطابق اخروٹ جسم کی فاضل چربی کو پگھلاتا ہے اور جسم کا فالتو وزن کم کرتا ہے اور اخروٹ کی یہ خوبی ٹائپ 2 کی زیابطیس ہونے کے چانسز کو بہت کم کر دیتی ہے۔
اخروٹ کو اگر روزانہ کی خوراک کا حصہ بنایا جائے تو یہ کھانے میں شامل گلوکوز کو خُون میں تیزی سے شامل ہونے سے روکتا ہے اور اخروٹ ہائی شوگر کے مریضوں کے لیے انتہائی مُفید ہے۔
بلڈ پریشر ٹھیک:
ڈاکٹرز اور غذائی ماہرین کا کہنا ہے کہ اخروٹ یاداشت کو بہتر بناتا ہے اور ذہنی تناؤ کو کم کرتا ہے اور ہائی بلڈ پریشر کو کنٹرول کرنے میں انتہائی مُفید قدرتی غذا ہے۔
بوڑھا نہیں ہونے دیتا:
اخروٹ انسان کو بُوڑھا نہیں ہونے دیتا اور اخروٹ کھانے والے لمبی عُمر تک زندہ رہتے ہیں میڈیکل سائنس میں اس چیز پر کئی تحقیقات موجود ہیں مگر آپ میڈیکل سائنس کو دیکھے بغیر اپنے مُلک میں وادی ہنزہ کے رہنے والوں کا مُشاہدہ ہی کر لیں تو کافی ہو گا، آپکو ہنزہ کے رہنے والوں کا مشاہدہ بتائے گا کہ وادی ہنزہ اخروٹ کے درختوں سے بھری پڑی ہے اور وادی ہنزہ میں ہر آدمی کی اوسط عُمر 100 سال سے زیادہ ہے۔
دماغ کو طاقتوربنائے:
مثل مشہور ہے کہ جو کھانا جس انسانی اعضو سے ملتا ہے وہ اُس کو فائدہ دیتا ہے گو کہ سائنس اس بات کو نہیں مانتی مگر سائنس یہ مانتی ہے کہ اخروٹ دماغ کی کام کرنے کی صلاحیت کو بڑھاتا ہے اور میڈیکل سائنس کی تحقیق کے مُطابق جو بُوڑھے افراد 50 گرام اخروٹ روزانہ کھاتے ہیں وہ اخروٹ نہ کھانے والے افراد کی نسبت بہتر یاداشت کے حامل ہوتے ہیں۔
ہڈیوں کے لیے بھی فائدہ مند:
اخروٹ میں موجود ایک فیٹی ایسڈ الفا لائنولینک ایسڈ ہڈیوں کو صحت مند اور مضبوط بنانے میں مدد دیتا ہے، اسی طرح اومیگا تھری فیٹی ایسڈز ورم کو کم کرتے ہیں جس سے بھی ہڈیا طویل المعیاد بنیادوں پر مضبوط ہوتی ہیں۔

نیندکے لیےفائدہ مند:
اخروٹ میں میلاٹونین نامی جز موجود ہے جو کہ اچھی نیند میں مدد دیتا ہے، اومیگا تھری فیٹی ایسڈز بھی بلڈپریشر کو کنٹرول کرنے اور تناﺅ سے نجات دلاتے ہیں، جس سے بھی نیند کا معیار بہتر ہوتا ہے۔

sample-ad
بارش کے بعد ہوا ميں پانی کے تیرتے ہوئے ننھے ننھے کروی (گیند نما Spherical) قطروں پر جب سورج کی سفید روشنی پڑتی ہے تو سات رنگوں میں بکھر جاتی ہے جسے دھنک یا۔۔۔ مزید پڑھیں

آج ہم وٹامن ای کے ان حیران کن فوائد اوراستعمالات کے بارے میں بتائیں گے، جن کے بارے میں آپ نے کبھی بھی نہیں سناہوگا۔وٹامن ای کومختلف اشیاے کے ساتھ۔۔۔ مزید پڑھیں

ملک و ملت کا نام روشن کرنے والوں کا نام روشن رکھنا زندہ قوموں کا شیوہ رہا ہے۔ ہم بحیثیتِ پاکستانی اپنے فرزندِ ملت ڈاکٹر عبدالسلام کی کاوشوں کو سراہتے ہیں۔۔۔ مزید پڑھیں

کچھ کھانے ایسے ہیں جنہیں دوسرے کھانوں میں شامل کر کے کھایا جائے تو وہ ہمارے نظام انہظام پر اچھے اثرات مرتب نہیں کرتے اور بعض دفعہ ہمیں بیمار بھی کر دیتے ہیں۔۔۔ مزید پڑھیں

دنیا میں چند عمارات ایسی بھی ہیں جن کی تعمیر پر ایک شاہانہ بجٹ خرچ کیا گیا ہے جس کے ساتھ ہی انہیں دنیا کی مہنگی ترین عمارات ہونے کا اعزاز حاصل ہوچکا ہے۔۔۔ مزید پڑھیں

ایک دن نائی نے بادشاہ سے عرض کیا،حضور آپ وزیر کی جگہ مجھے وزیر کیوں نہیں بنا دیتے۔ بادشاہ نے مسکرا کر حجام کی طرف دیکھا اور اس سے کہا،ٹھیک ہے لیکن پہلے تم۔۔۔ مزید پڑھیں

sample-ad
برہنہ حالت میں کبھی خود کو آئینے میں مت دیکھیں کیونکہ اس طرح جن آپ پر عاشق ہو سکتے ہیں اور آپ کے ساتھ تعلق کی کوشش کر سکتے ہیں۔ ایسی صورت میں اور کوئی بھی ۔۔۔ مزید پڑھیں

جوزف سوان اور تھامس ایڈیسن نے 1870 کی دہائی میں بجلی کا بلب بنایا۔ اس سے چند برس بعد ایڈیسن نے بجلی بنانے کے سٹیشن نیویارک میں پرل سٹریٹ اور لندن میں ۔۔۔ مزید پڑھیں

انسان نے سونا 8,000 سال قبل دریافت کر لیا تھا۔ 750 سال قبل از مسیح تک یعنی سونے کی دریافت کے سوا پانچ ہزار سال بعد تک انسان صرف سات دھاتوں سے واقف تھا ۔۔۔ مزید پڑھیں

سورہ کہف کی تلاوت فتنے دجال سے نجات کا باعث ہے ۔ خروج دجال قیامت کی بڑی نشانیوں میں سے ایک ہے اور فتنہ دجال زمانے کے شروفتن میں سب سے بڑا فتنہ ہے مکہ مکرمہ۔۔۔ مزید پڑھیں

خلائی جہاز میں 2 سولر پینل لگائے گئے تھے جن کو سپیس میں پہنچ کر کھولنا تھا لیکن جہاز کے اندر خرابی ہونے کی وجہ سے سولر پینل نے کام کرنا چھوڑ دیا اور یہی وجہ تھی کہ ۔۔۔ مزید پڑھیں

رسول اللہ ﷺ کے زمانے کے لبرل اور سیکیولر لوگوں نے قرآن میں مچھر کے ذکر پر اعتراض کیا کہ یہ کیسی آسمانی کتاب ہے جس میں اتنی سے بے وقعت چیز کا ذکر کیا گیا ہے ۔۔۔ مزید پڑھیں