کوشش اور محنت کے رنگ کی دلچسپ کہانی

مینڈکوں کا ایک گروہ دریا کے کنارے سے نکلا اور اُچھل کُود کرتا ہوا قریبی جنگل میں جا پہنچا اور خوراک کی تلاش کرنے لگا، اسی تلاش میں سرگرداں دو مینڈک ایک گہرے سُوراخ میں گر گئے جہاں سے اُن کا نکلنا تقریباً ناممکن نظر آ رہا تھا، اُن کے گروپ کے باقی تمام مینڈک سوراخ کے اوپر کھڑے ہوکر اُنہیں دیکھنے لگے اور بولے یہ سوراخ تو بہت گہرا ہے۔
گہرے سوراخ کے اوپر کنارے پر کھڑے مینڈکوں نے سوراخ کی گہرائی سے مایوس ہوکر اپنے ساتھیوں سے کہا ” آج تُم لوگوں کی قسمت بہت خراب ہے اسی لیے تُم اتنے گہرے سوراخ میں گر گئے ہو جہاں پر ہم تمہاری کوئی مدد نہیں کر سکتے اس لیے اب صبر کر لو کیونکہ یہاں سے زندہ نکلنا اب ممکن نہیں۔
نیچے موجود دونوں مینڈک اوپر والے مینڈکوں کی گفتگو سُن نہیں پا رہے تھے اور باہر نکلنے کے لیے بار بار چھلانگیں لگا رہے تھے۔
چھلانگیں لگاتے لگاتے ایک مینڈک نے کنارے والوں کی گفتگو سُنی کے یہ دونوں کسی صُورت باہر نہیں نکل پائیں گے اور انہیں یہیں مرنا ہوگا وغیرہ، یہ سُن کر چھلانگ لگانے والے مینڈک کی تمام ہمت ختم ہو گئی اُس کا دل پھٹ گیا اور موت اُسے سامنے نظر آئی اور چھلانگ سے واپس زمین تک گرتے گرتے بیچارہ خوف سے مر گیا۔
اوپر موجود تمام مینڈکوں نے اُس کی موت کا دردناک منظر دیکھا اور بولے ہم تو پہلے ہی کہہ رہے تھے کہ اب تُم دُنیا سے جانے کی تیاری کر لو پر یہی چھلانگیں لگا لگا کر اپنے آپ کو ہلکان کر رہا تھا۔
پہلے مینڈک کی موت کو دیکھ کر سوراخ میں موجود دُوسرے مینڈک نے سوراخ سے نکلنے کے لیے بھرپور جدوجہد میں کئی چھلانگیں لگائیں، وہ چھلانگیں لگاتا اور اوپر والے مینڈک اُسے منع کرتے کے بس کرو اب کوئی فائدہ نہیں تم کو یہیں آخری سانسیں پُوری کرنی پڑیں گی۔
چھلانگیں لگانے والے مینڈک کو اوپر والوں کی کوئی بات نہیں سُن رہی تھی چھلانگیں لگاتے لگاتے وہ مرے ہُوئے مینڈک کے اوپر کھڑا ہُوا اور پوری قوت سے چھلانگ لگائی جس سے وہ سوراخ کے کنارے تک پہنچ گیا اُس نے اپنے ہاتھوں سے کنارے کو پکڑا اور اپنے آپ کو کھینچ کر سوراخ سے باہر نکال لیا۔
باہر نکل کر وہ خوشی خوشی کھڑا ہوا تو اُس کے دوسرے ساتھیوں نے کہا ” تمہیں سوراخ میں ہماری آواز نہیں آرہی تھی ہم تمہیں بتا رہے تھے کہ اس سوراخ سے نکلنا ناممکن ہے”۔
مینڈک نے اپنے ساتھیوں کو بتایا کہ اُسے اونچا سُنائی دیتا ہے وہ سوراخ کے اندرسے باہر نکلنے کے لیے ہر چھلانگ صرف اسی لیے لگا رہا تھا کے اُسے لگ رہا تھا کے اوپر کھڑے اُس کے ساتھی اُس کی حوصلہ افزائی کر رہے ہیں اور ہر چھلانگ میں ناکامی کے بعد اُس کی ہمت بندھا رہے ہیں تاکہ وہ دوبارہ کوشش کرے۔
انسان کی زندگی کا میدان بھی اسی سوراخ کی طرح ہیں جس میں لوگوں کی گفتگو اُس کی زندگی پر بے حد اثر انداز ہوتی ہے اور اگر وہ اپنے متعلق دی گئی ہر رائے کو صحیح مان لیتا ہے تو عین ممکن ہے کہ وہ سوراخ میں گرے مینڈک کی طرح حوصلہ ہار جائے، اسی طرح وہ لوگ جو دُوسروں کو حوصلہ شکنی کرتے ہیں وہ ہمت، کوشش اور محنت کے اُس رنگ سے نا آشنا ہوتے ہیں جو نا ممکن کو ممکن کر دیتا ہے۔

بارش کے بعد ہوا ميں پانی کے تیرتے ہوئے ننھے ننھے کروی (گیند نما Spherical) قطروں پر جب سورج کی سفید روشنی پڑتی ہے تو سات رنگوں میں بکھر جاتی ہے جسے دھنک یا۔۔۔ مزید پڑھیں

آج ہم وٹامن ای کے ان حیران کن فوائد اوراستعمالات کے بارے میں بتائیں گے، جن کے بارے میں آپ نے کبھی بھی نہیں سناہوگا۔وٹامن ای کومختلف اشیاے کے ساتھ۔۔۔ مزید پڑھیں

ملک و ملت کا نام روشن کرنے والوں کا نام روشن رکھنا زندہ قوموں کا شیوہ رہا ہے۔ ہم بحیثیتِ پاکستانی اپنے فرزندِ ملت ڈاکٹر عبدالسلام کی کاوشوں کو سراہتے ہیں۔۔۔ مزید پڑھیں

کچھ کھانے ایسے ہیں جنہیں دوسرے کھانوں میں شامل کر کے کھایا جائے تو وہ ہمارے نظام انہظام پر اچھے اثرات مرتب نہیں کرتے اور بعض دفعہ ہمیں بیمار بھی کر دیتے ہیں۔۔۔ مزید پڑھیں

دنیا میں چند عمارات ایسی بھی ہیں جن کی تعمیر پر ایک شاہانہ بجٹ خرچ کیا گیا ہے جس کے ساتھ ہی انہیں دنیا کی مہنگی ترین عمارات ہونے کا اعزاز حاصل ہوچکا ہے۔۔۔ مزید پڑھیں

ایک دن نائی نے بادشاہ سے عرض کیا،حضور آپ وزیر کی جگہ مجھے وزیر کیوں نہیں بنا دیتے۔ بادشاہ نے مسکرا کر حجام کی طرف دیکھا اور اس سے کہا،ٹھیک ہے لیکن پہلے تم۔۔۔ مزید پڑھیں

یہ تاریخ کا پہلا واقعہ تھا کہ کسی ہندو کی چتا کو آگ نہ لگنے کی وجہ سے شمشان گھاٹ میں ہی دفنا دیا گیا ۔ایک ہندو احترام قران میں اس دنیا کی آگ سے محفوظ رہا ہم اس کتاب پر۔۔۔ مزید پڑھیں

یہ ایک مفلس غریب الوطن کے عزم و ہمت کی انوکھی داستان ہے جو ثابت کرتی ہے کہ آپ ڈٹے رہیں، محنت کرتے رہیں تو بالآخر کامیابی آپ کے قدم چومتی ہے۔۔۔ مزید پڑھیں

برہنہ حالت میں کبھی خود کو آئینے میں مت دیکھیں کیونکہ اس طرح جن آپ پر عاشق ہو سکتے ہیں اور آپ کے ساتھ تعلق کی کوشش کر سکتے ہیں۔ ایسی صورت میں اور کوئی بھی ۔۔۔ مزید پڑھیں

جوزف سوان اور تھامس ایڈیسن نے 1870 کی دہائی میں بجلی کا بلب بنایا۔ اس سے چند برس بعد ایڈیسن نے بجلی بنانے کے سٹیشن نیویارک میں پرل سٹریٹ اور لندن میں ۔۔۔ مزید پڑھیں

انسان نے سونا 8,000 سال قبل دریافت کر لیا تھا۔ 750 سال قبل از مسیح تک یعنی سونے کی دریافت کے سوا پانچ ہزار سال بعد تک انسان صرف سات دھاتوں سے واقف تھا ۔۔۔ مزید پڑھیں

سورہ کہف کی تلاوت فتنے دجال سے نجات کا باعث ہے ۔ خروج دجال قیامت کی بڑی نشانیوں میں سے ایک ہے اور فتنہ دجال زمانے کے شروفتن میں سب سے بڑا فتنہ ہے مکہ مکرمہ۔۔۔ مزید پڑھیں